کسان کارڈ، زرعی آلات ، دھان ، کماد، گندم کی کاشت ،کھادیں اور محکمانہ سروسزکا جائزہ لیا

ٹوبہ ٹیک سنگھ( محمد آصف حسین رانا)ڈپٹی کمشنر عمر جاوید نے کسان کارڈ، زرعی آلات ، دھان ، کماد، گندم کی کاشت ،کھادیں اور محکمانہ سروسز کے حوالہ سے جائزہ اجلا س کی صدارت کی۔اجلاس میں مرکزی نائب صدر پی ٹی آئی چوہدری اشفاق، چیئرمین ایگری کلچر ایڈوائزری کمیٹی میاں امتیاز ،ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت آصف عزیر ،جنرل سیکرٹری پی ٹی آئی سہیل غنی ،چیئرمین ٹیوٹا سہیل عباس ٹیپو ،اویس سیالوی سمیت زمینداران کے نمائندگان کی کیثر تعداد میں شرکت کی۔ کھادوں کی مارکیٹ میں دستیابی طلب و رسد اور مقررہ نرخوں پر فروخت بارے تفصیلی جائزہ لیا۔ اجلاس میں کاشتکاروں اور کسانوں کو گندم اور دیگر فصلات کے لئے ما رکیٹ میں کھادوں کی دستیابی اور مقررہ نر خون پر فروخت یقینی بنانے کا عزم کیا گیا۔ ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت آصف عزیر نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ضلع بھر میں 1لاکھ کسان رجسٹرڈ ہو چکے ہیں جن میں سے 20ہزار کو کسان کارڈ کا اجزاءکیا جا چکا ہے ۔ کسان کارڈ کے تحت زمینداروں کو سبسڈی سمیت حکومتی سہولیات فراہم کی جارہی ہیں۔انہوں نے مزید بتایا کہ محکمہ زراعت کی طرف سے مختلف دیہاتوں میں کسان سیمینار منعقد کرکے کاشتکاروں اور زمینداروں کوحکومت کی زرعی پالیسیوں کے حوالہ سے بہتر پیداوار اور فصلات میں جڑی بوٹیوں کے خاتمہ بارے مشورے دینے کا سلسلہ جاری ہے ۔ مرکزی نائب صدر پی ٹی آئی چوہدری اشفاق نے کہا کہ حکومت پنجاب کسانوں اور کاشتکاروں کو ہر ممکن ریلیف کے ساتھ ساتھ زراعت کے شعبہ میں بہتر پیدوار حاصل کرنے کےلئے ہمہ قسم کی سہولیات مہیا کر رہی ہے، زراعت ہماری معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے۔ اس شعبہ کو ترقی دیکر ہم ملکی معیشت کو بہتری کی جانب گامزن کر سکتے ہیں۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر عمر جاوید نے کسان کارڈ کی ترسیل کو بڑھانے کے لیے افسران کو ہدایات جاری کیںاور کہا کہ محکمہ زراعت توسیع کاشتکاروں کی فلاح و بہبود کےلئے موثر اقدامات کریں ۔حکومت پنجاب کسان کارڈ کے ذریعے مختلف سہولیات فراہم کرکے زراعت کو فروغ،جدید کھیتی باڑی کو متعارف کرانے کے لیے زرعی آلات پر کاشتکاروں کو سبسڈی فراہم کررہی ہے جس کے نتائج زرعی پیداوارکے میں اضافہ کے ساتھ ساتھ کسان کی خوشخالی بھی شامل ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کاشتکار اور کسان ضرورت سے زیادہ مارکیٹ سے کھاد نہ خرید کریں تاکہ اس کی قلت پیدا نہ ہو جبکہ افسران زراعت کا شتکاروں کو مار کیٹ میں کھاد کی دستیابی اور مقررہ قیمتون پر فروخت یقنی بنائیں۔ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ کھاد ذخیرہ کر نے، کھاد چھپاکر رکھنے اور زائد قمیتوں پر فروخت کرنے والوں کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے گا۔

مکمل پڑھیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button