Trending

صحافت کسی کی وراثت نہیں ہے، صحافت غریب لوگوں کے حقوق اور مسائل اجاگر کرنے کا نام ہے

ٹوبہ ٹیک سنگھ ( بیورو رپورٹ ) صحافت کسی کی وراثت نہیں ہے، صحافت غریب لوگوں کے حقوق اور مسائل اجاگر کرنے کا نام ہے صحافت ظلم کے خلاف جہاد کا نام ہے صحافت کو کاروبار مت بناوُ صحافت کو بدنام نہ کرو غریب اور مظلوم کا ساتھ دے کر ان کی آواز کو اعلیٰ حکام تک پہنچاوُ ان خیالات کا اظہار معروف صحافی محمد آصف حسین رانا ڈپٹی کوارڈینیٹر پریس کلب ٹوبہ ٹیک سنگھ نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ان کا مزید کہنا تھا کہ ریاست صرف امیر اور بڑے لوگوں کی نہیں ہے اس کے حصے دار غریب لوگ بھی ہیں۔جب کوئی صحافی کسی غریب اور مظلوم کی آواز اٹھانے لگے تو اس کا بھرپور ساتھ دیں،اور نہ کہ غریبوں کی آواز کو دبانے کے لیئے اس پر تنقید کریں ہمیشہ حق اور سچ کا ساتھ دیں،اور باطل قوتوں کے خلاف ڈٹ کر مقابلہ کریں، ظالم کے دشمن اور مظلوم کے مددگار بنو،ہمیشہ حقائق کو مدنظر رکھتے ہوئے اور تحقیق کے اصولوں کو مد نظر رکھتے ہوئے خبروں کی تشہیر کرو،اور جھوٹ اور غلط بیانی سے پرہیز کرو، اعلیٰ آفیسران اور سرداروں کی خوشامد اور چاپلوسی سے گریز کریں۔صحافت کا فریضہ عبادت سمجھ کر سر انجام دیں آخر میں انہوں نے کارل مارکس کی بات کو دہرایا صحافت اس اطلاع کا نام نہیں کے فلاں انسان مر گیا ، بلکہ صحافت اس اعلان کا نام ہے کہ یہاں کوئی مرنے والا ہے

مکمل پڑھیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button