گندم کو کھاد کی سب سے زیادہ ضرورت ہے اور نہ ملنے سے گندم کی فصل پر منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں

ٹوبہ ٹیک سنگھ( محمد آصف حسین رانا سے ) ایگریکلچر ڈیپارٹمنٹ کے سابق ضلعی چیئرمین چوہدری عمران ندیم سدھو نے انتہائی تشویش کے ساتھ اظہار کرتے ہو ئے کہا ہے کہ ٹوبہ ٹیک سنگھ سمیت پنجاب میں لاکھوں ایکڑ اراضی پرگندم کاشت کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے، گندم کو کھاد کی سب سے زیادہ ضرورت ہے اور نہ ملنے سے گندم کی فصل پر منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیںدوسری جانب کھاد مافیا سرگرم ،کسانوں کو کھاد نہیں مل رہی یا پھر کھاد مافیا من پسند ریٹس پربلیک میں بیچ رہے ہیں ،مایوس کسانوں کی دوہائی جبکہ ناقص پالیسی کی وجہ سے نگران پنجاب حکومت خاموش تماشائی کا کردار ادا کررہی ہے،کسانوں کو سرکاری ریٹ پر کھادملنا خواب بن گیا، کھاد کے حصول کے لیے کسان غلہ منڈی ودیگر مقامات پرمارا مارا پھررہا ہیں،کھاد کی قلت کے باعث گندم کی بوائی متاثر ہونے کا خدشہ ہے،جن کسانوں کا زیادہ تر انحصار زراعت پیشہ پر ہے، مصنوعی کھاد بحران کی وجہ سے انہیں زرعی معاشی قتل سے بچایا جائے،ملکی غذائی ضروریات کو پورا کرنے میں کسان کا اہم کردار ہے لیکن افسوس صد افسوس ہر دور میں ہی کسانوں کو ان کی بنیادی زرعی ضروریات سے محروم رکھ دیا جاتا ہے،کھاد کے خود ساختہ قیمت مقرر کرنے والے ڈیلرز کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لاتے ہوئے کھاد بحران ختم کروایا جائے، کسان شدید ذہنی اذیت اور ذہنی دبا کا شکار ہورہے ہیں،نگران حکمران ہوش کے ناخن لیں اپنے قبلے کو درست کرتے ہوئے کسانوں کو کھاد ، بیج، زراعی آلات کی سبسڈی پر فراہمی ، کسانوں کی فلاح و بہبود کے اقدامات اٹھائیں جائیں اورکھاد مافیا کے خلاف فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مکمل پڑھیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button