اندھا قتل ٹریس آوٹ سرکٹی لاش کا معمہ حل، قاتل مرد اور عورت گرفتار

ٹوبہ ٹیک سنگھ ( محمد آصف حسین رانا سے ) پولیس کو اطلاع موصول ہوئی کہ ایک شخص اسم و مسکن نا معلوم کی نعش بحد رقبہ چکنمبر438ج ب کھیتوں میں پڑی ہے جس پرایس ایچ اوتھانہ صدر گوجرہ معہ انسپکٹر مظہر تبسم و ملازمان پولیس فوری طور پر موقع پر پہنچے اور تصدیق کی کہ ایک شخص اسم و مسکن نا معلوم کی نعش پڑی ہے جس کی گردن اور بائیں بازو کٹا ہوا ہے۔ انچارج کرائم سین یونٹ ٹوبہ معہ ٹیم نے وقوعہ پر پہنچ کر شواہد اکٹھے کیے جس سے معلوم ہوا کہ اس شخص کو نا معلوم ملزمان نے نامعلوم وجوہات کی بناء پر تیز دھار آلے سے قتل کیا تھا۔ جس پر مقدمہ نمبر898مورخہ 03-10-23 بجرم/201 302 ت پ تھانہ صدر گوجرہ میں درج رجسٹر کیا گیا۔مقتول کی شناخت عبد التمجیدولد محمد صدیق سکنہ نت کلاں تحصیل و ضلع وزیر آباد کے نام سے ہوئی مقتول کے اہل خانہ سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بتایا کہ مقتول نے اپنے اہل خانہ سے ناراض ہو کر67ج ب سدھار فیصل آبادمیں رہائش رکھی ہوئی تھی۔ ڈی پی او ٹوبہ ٹیک سنگھ عبادت نثار نے وقوعہ کی سنگینی کو مد نظر رکھتے ہوئے ملزمان کی گرفتاری کے لیے ڈی ایس پی گوجرہ معہ ایس ایچ او تھانہ صدر گوجرہ و ملا زمان پولیس پر مشتمل سپیشل ٹیم تشکیل دی پولیس ٹیم نے دن رات کی انتھک محنت، جدید ٹیکنالوجی،مخبر کی اطلاع اور انٹیلی جنس انفارمیشن کی مدد سے 2 ملزمان 1۔عرفان علی ولد محمد عباس قوم جٹ سکنہ366ج ب حال مقیم67ج ب فیصل آباد 2۔طاہرہ پروین زوجہ محمد رمضان قوم راجپوت سکنہ223ر ب فیصل آباد کو گرفتار کیا۔ دوران تفتیش یہ بات سامنے آئی کہ ملزمہ طاہرہ کے مقتول عبد التمجید کے ساتھ تعلقات تھے بعد میں طاہرہ پروین نے ملزم عرفان کے ساتھ بھی تعلقات قائم کر لیے۔ قتل کی وجہ بتاتے ہوئے ملزم عرفان نے انکشاف کیا کہ مقتول کا سدھار میں 2.5مرلہ کا مکان تھا جسے انہوں نے ہتھیانے کا پلان بنایا وقوعہ کے روز پلان کے مطابق ملزمہ طاہرہ کی ایما پر میں مقتول کو بسواری موٹر سائیکل سدھار سے لیکر بحد رقبہ چک نمبر438ج ب لے آیا اور وہاں پر پسٹل سے فائر مار کر عبد التمجید کو قتل کر دیا چونکہ مقتول کے بائیں ہاتھ کی انگلیاں پہلے سے کٹی ہوئی تھیں اس لیے اس نے مقتول کی شناخت چھپانے کے لیے چھری سے مقتول کی گردن اور بائیں بازو کاٹ کر زمین میں دبا دیا اور نعش کپاس کے کھیت میں پھینک دی۔ ملزمان سے آلہ قتل پسٹل30بور اور چھری بھی برآمد کر لی گئی ہے۔

مکمل پڑھیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button